قومی

پرویز الہی کو جتوانے کیلئے گورنرہاؤس میں چیف سیکرٹری اور آئی جی پنجاب کودھمکیاں جانیکا انکشاف

لاہور(94 نیوز) چوہدری پرویز الہٰی کو بطور وزیر اعلیٰ پنجاب جتوانے کے لئے گورنرہاؤس پنجاب میں پی ٹی آئی حکومت کی جانب سے چیف سیکرٹری اور آئی جی پر دباو ڈ النے کا انکشاف ہوا ہے۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق چوہدری پرویز الہٰی کو جتوانے کے لئے چیف سیکرٹری اور آئی جی پنجاب کو گورنرہائوس میں بلایا گیا اور انہیں چوہدری پرویز الہی کی کامیبابی کیلئے دھمکیاں دی گئیں۔
وزیرِاعلی پنجاب کے انتخاب کے دوران پنجاب اسمبلی میں شدید ہنگامہ آرائی ہوئی، جسے میڈیا کے کیمروں نے عکس بند کرلیا، تاہم اس سے پہلے جو ہوا اس کی اندرونی کہانی اب سامنے آئی ہے، اور ذرائع کا کہنا ہے کہ تحریک انصاف کے نامزد امیدوار اور ق لیگ کے صدر چوہدری پرویز الہیٰ کو وزیراعلیٰ بنوانے کے لئے افسران پر دباؤ ڈالا جاتا رہا، اور انہیں گورنر ہاؤس بلا کر بھی دھمکیاں دی گئیں۔

گزشتہ روز پنجاب اسمبلی میں ہونے والی شدید ہنگامہ آرائی اور ڈپٹی اسپیکر دوست مزاری پر تحریک انصاف کے اراکین کے حملے کے بعد وزیراعلیٰ کے انتخاب کا انعقاد ناممکن نظر آرہا تھا، تاہم چیف سیکرٹری اور آئی جی پنجاب کے دبنگ ایکشن کی وجہ سے ممکن ہوا، اور اگر یہ دونوں افسران ایکشن نہ کرتے تو الیکشن کا انعقاد بھی ممکن نہ ہوتا۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ چیف سیکرٹری اور آئی جی پنجاب نے قانون اور آئین پر عملدرآمد کرکے انتخاب کا انعقاد کروایا،
ذرائع کا کہنا ہے کہ چیف سیکرٹری اور آئی جی پنجاب کے انکار کے بعد دونوں افسران کو تبدیل کرکے نئے افسران تعینات کرنے کی سمری بھیجی گئی، تاہم وفاق نے دونوں افسران کو تبدیل نہ کیا۔

مزید

متعلقہ خبریں

جواب دیں

Close