بین الاقوامی

ناروے میں بہادر مسلم نوجوان نے قرآن پاک جلانے کی کوشش ناکام بنا دی

ناروے (94 نیوز) ناروے میں ایک مسلم نوجوان نے قرآن پاک جلانے کی مذموم کوشش ناکام بنا دی۔ غیرملکی خبررساں ادارے کے مطابق ناروے کے شہر کرسٹین سینڈ میں قرآن پاک کی توہین کا افسوس ناک واقعہ پیش آیا۔

اسلام مخالف تنظیم (سیان)کے کارکنوں نے ایک ریلی نکالی جس میں قرآن پاک کی شدید بے حرمتی کی گئی۔

تفصیلات کے مطابق سوشل میڈیا پر ایک ویڈیو وائرل ہو ئی ہے جس میں دیکھا جاسکتا ہے کہ  ناروے  میں  احتجاج کے دوران ایک شخص قرآن پاک جلانے کی کوشش کر رہا ہے۔ تاہم مسلم نوجوان نے ایمانی جذبے کے ساتھ اس کوشش کو ناکام بنا دیا۔ مسلم نوجوان کا جذبہ دیکھ کر قرآن پاک جلانے والا بدبخت شخص بھی ڈر گیا۔ ناروے کی پولیس نے مسلم نوجوان کو موقع سے ہی حراست میں لے لیا۔موقع پر پر ناروے پولیس کی بڑی تعداد نے نوجوان کے اردگرد اپنا حصار بنا لیا۔ سوشل میڈیا پر پر اس واقعے کی مذمت کی جاری ہے جبکہ مسلم نوجوان کو فوری طور پر رہا کرنے کا بھی مطالبہ کیا جارہا ہے۔

پاکستان تحریک انصاف کے وزیر علی محمد خان نے بھی اس واقعے کی مذمت کی ہے۔سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹویٹر پر ٹویٹ کرتے ہوئے انہوں نےناروے میں قرآن پاک کو جلانے اور اس گھناؤنے جرم کو روکنے کی کوشش کرنے والے مسلم نوجوانوں کی گرفتاری کی مذمت کی۔علی محمد خان نے کہا کہ ناروے کی حکومت کو اس واقعے پر اپنی پوزیشن کی وضاحت کرنی ہوگی ۔انہوں نے ناروے حکومت سے مطالبہ کیا کہ اس کے خلاف سخت کاروائی کریں اور مسلم نوجوانوں کو فوری رہا کریں۔علی محمد خان نے کہا کہ کوئی بھی مذہب کسی بھی مذہب کی کتابیں جلانے کی اجازت نہیں دیتا۔

پاکستان نے ناروے میں قرآن پاک کی مبینہ بے حرمتی کی مذمت کی ہے ۔ ہفتہ وار بریفنگ کے دوران ترجمان دفتر خارجہ نے ناروے کے ایک شہر میں قرآن پاک کی مبینہ بے حرمتی کے واقعے پر مذمت کا اظہار کیا۔ انہوں نے کہا کہ مسلمان دوسرے مذاہب کا احترام کرتے ہیں اور دیگر مذاہب کے لوگوں کو بھی مسلمانوں کے جذبات و احساسات کا احترام کرنا چاہیے۔ے۔واضح رہے کہ ناروے میں ہی 2011 میں ایک اسلام مخالف شخص آندریس بریوک نے فائرنگ کرکے 77 افراد کو قتل کردیا تھا۔ عدالت نے اسے 21 سال قید کی سزا سنائی تھی۔

مزید

متعلقہ خبریں

جواب دیں

Close