قومی

ڈیم کیلئے فنڈ جمع کرنے کا مقصد تعمیر نہیں صرف آگاہی پھیلانا تھا،ثاقب نثار

سابق چیف جسٹس کی بات سن کر لوگ حیران رہ گئے

لاہور (94نیوز)  لاہور میں تین روزہ لاہور لٹریری فیسٹیول کا انعقاد کیا گیا جہاں سابق چیف جسٹس ثاقب نثار کو ملک کےآبی مسائل پر بات کرنے کے لیے مدعو کیا گیاتھا۔ فیسٹیول کے دوران ڈیم کے لیے اکٹھی کی گئی رقم کے حوالے سے سوال کے جواب میں سابق چیف جسٹس ثاقب نثار نے کہا کہ ہم نہیں سمجھتے تھے کہ یہ رقم منصوبے کو مکمل کرنے کے لیے کافی ہوگی۔ڈیم کے لیے جمع کی گئی رقم کا مقصد تعمیر نہیں بلکہ آگاہی تھا۔ ہم لوگوں میں آگاہی پھیلانا چاہتے تھے اور لوگوں کو اس کی اہمیت سمجھانا چاہتے تھے، اگر ان عطیات کے ذریعے ہم 15 ارب روپے جمع کر سکے تو پھر یہ ایک کامیابی ہوگی۔ انہوں نے کہا کہ اس رقم کو کبھی بھی 100 فیصد تعمیر میں استعمال کرنے کا ارادہ نہیں کیا گیا تھا تاہم اس کے ذریعے یہ ایک مہم بن گئی ۔

سابق چیف جسٹس آف پاکستان جسٹس ثاقب نثار نے کہا کہ ڈیم بنانے کے لیے دیے گئے حکم پر میں تنقید سننے کو تیار ہوں کہ آیا یہ سپریم کورٹ اور میری طرف سے بُرا قدم تھا یا پاکستان کے عوام کے مستقبل کے لیے اچھا قدم تھا۔ انہوں نے کہا کہ لوگ میرے پاس اپنی تمام پنشن عطیہ کرنے کے لیے آتے تھے، چھوٹے بچے میرے پاس آئے،یہ ایک جذبہ تھا، اور مجھے یقین ہے کہ یہ جاری رہے گا، ہم نے تجویز دی ہے کہ کس طرح اس فنڈ کو بلز اور بونڈز وغیرہ کے ذریعے بڑھایا جاسکتا ہے۔واضح رہے کہ ملک میں آبی مسائل اور آبی قلت کے پیش نظر سابق چیف جسٹس ثاقب نثار نے ہی پہلے ڈیمز کی تعمیر کا حکم دیا جس کے بعد انہوں نے ڈیمز کی تعمیر کے لیے ایک فنڈ بھی قائم کیا جس کا نام بعد میں ”چیف جسٹس وزیراعظم ڈیم فنڈ” رکھ دیا گیا جس میں پاکستانیوں نے اپنا اپنا حصہ ڈالا تھا اور تاحال ڈیم فنڈز میں عطیات کا سلسلہ جاری ہے۔ ڈیم فنڈ اکٹھا کرنے کے لیے ایک بینک اکاؤنٹ بھی مختص کیا گیا تھا۔

مزید

متعلقہ خبریں

جواب دیں

Close