National

Sahiwal affected family tragedy occurred before the call Islamabad

قائمہ کمیٹی برائے داخلہ نے سانحہ ساہیوال کے مقتولین کے اہل خانہ کو طلب کیا تھا: پولیس حکام

Islam Abad (94news) سانحہ ساہیوال میں مقتول خلیل کے اہل خانہ صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی سے ملاقات کے لیے اسلام آبادپہنچے لیکن ان کی صدر مملکت سے ملاقات نہیں ہو سکی۔ ترجمان ایوان صدر نے خلیل کے اہل خانہ کی صدر سے ملاقات طے ہونے پر وضاحتی بیان جاری کرتے ہوئے کہا کہ سانحہ ساہیوال کے مقتول خلیل کے خاندان کی صدرسے ملاقات طے نہیں تھی ۔تاہم اب میڈیا رپورٹس میں بتایا گیا ہے کہ پولیس حکام کے مطابق قائمہ کمیٹی برائے داخلہ نے ذیشان اور خلیل کے خاندان والوں کو طلب کیا تھا۔ ذیشان اور خلیل کے خاندان والوں کو پولیس لے کر اسلام آباد گئی تھی۔جب کہ دونوں خاندانوں کو بلائے جانے کے لیے قائمہ کمیٹی کا لیٹر بھی موجود ہے۔پولیس حکام کے مطابق سانحہ ساہیوال کے مقتولین کے اہل خانہ سینیٹ کی بلڈنگ میں موجود رہے لیکن کمیٹی نے انہیں اندر نہیں بلایا۔

پولسی ذرائع کے مطابق قائمہ کمیٹی برائے داخلہ کی جانب سے کسی کو بھی طلب کیا جائے تو پولیس ہی لے کر جاتی ہے جب کہ صدر مملکت اور چئیرمینسینیٹ کے بلانے پر کبھی پولیس کسی شخص کو لے کر نہیں گئی۔ واضح رہے کہ گذشتہ روز لاہور میں اپنے وکیل شہباز بخاری کے ہمراہ پریس کانفرنس کے دوران مقتول خلیل کے بھائی جلیل نے کہا تھا کہ صدر مملکت ڈاکٹرعارف علوی اور چیئرمین سینٹ نے خصوصی ملاقات کے لیے ان کے خاندان کو اسلام آباد بلایا تھا۔لیکن وہاں پہنچ کر علم ہوا کہ صدر مملکت خود کراچی کے دورے پر ہیں۔ ہمارا خاندان اسلام آباد کی سڑکوں پر خوار ہوتا رہا ۔ حکومت واقعہ میں سنجیدگی دکھانے کے بجائے متاثرہ خاندان کا تماشا بنا رہی ہے ۔ قاتل اہلکاروں کو مکمل تحفظ دیا جا رہا ہے جبکہ مدعی متاثرہ خاندان سڑکوں پر دھکے کھا رہا ہے ۔ جلیل کے وکیل شہباز بخاری نے کہا کہ اگر حکومت اور تحقیقاتی اداروں کی جانب سے دو روز میں اہم پیشرفت نہ کی گئی تو پیر کو عدالت کا دروازہ کھٹکھٹائیں گے ۔سانحہ ساہیوال میں متاثرہ خلیل کے خاندان نے تحقیقات میں پیش رفت پر عدم اعتماد کا اظہار بھی کیا۔ انہوں نے کہا کہ 5 Was quoted by police personnel, other officials were arrested and why? The victim's brother Khalil demanded that others involved in the incident 11 Officers be arrested immediately.

More

Related news

Leave a Reply

Close