National

In front of the extremists, the Muslim girl raised the slogan Takbir “In front of the extremists, the Muslim girl raised the slogan Takbir” In front of the extremists, the Muslim girl raised the slogan Takbir

Faisalabad(94 news) Election Commission disqualifies Faisal Wawda in dual citizenship case “In front of the extremists, the Muslim girl raised the slogan Takbir” کے نعرے۔

تفصیلات کے مطابق گزشتہ روز وزیراعظم کے معاون خصوصی برائے سیاسی ابلاغ و ترجمان ڈاکٹر شہباز گل کی زیر قیادت اقبال سٹیڈیم سے ہیلتھ کارڈ بارے آگاہی کیلئے ریلی نکالی گئی جو سول لائن، جیل روڈ اور دیگر راستوں سے ہوتی ہوئی ضلع کونسل چوک اور پھر گھنٹہ گھر چوک پہنچی۔
ریلی میں تحریک انصاف، آئی ایس ایف اور سول سوسائٹی کے مختلف مکاتب فکر سے تعلق رکھنے والے افراد نے شرکت کی، راستے میں آنیوالے علاقوں سے بھی پرجوش نوجوان ریلی میں شریک ہوتے گئے۔ ریلی کے شرکا نے بینرز، فلیکس، پلے کارڈز اور پوسٹرز اٹھا رکھے تھے جن پر صحت کارڈ کے حوالے سے مختلف نعرے درج تھے۔

اس موقع پر تحریک انصاف کے رہنما،ممبر صوبائی اسمبلی و چیئرمین ایف ڈی اے چوہدری لطیف نذر، سابق ممبر قومی اسمبلی ڈاکٹر نثار احمد جٹ اور پی ٹی آئی کے دیگر قائدین بھی ان کے ہمراہ تھے۔

شہباز گل کی قیادت میم ریلی جب کچہری بازار پہنچی تو اس موقع پر وہاں کے دکانداروں اور شہریوں نے “In front of the extremists, the Muslim girl raised the slogan Takbir” کے نعرے لگا دیے۔ جبکہ ان نعروں کے جواب میں تحریک انصاف کے کارکنوں کی جانب سے بھی وزیراعظم عمران خان کے حق میں جوابی نعرے لگائے گئے۔ بعد ازاں ضلع کونسل فیصل آباد میں پریس کانفرنس سے خطاب میں ڈاکٹر شہباز گل نے کہاکہ عمران خان نے پاکستان کی تاریخ میں پہلی بار ہرشہری کا ہاتھ پکڑا اور اسے 10لاکھ روپے تک سالانہ مفت علاج کی سہولت فراہم کرنے کیلئے ہیلتھ کارڈ کا اجرا کیا اسی طرح غریب طبقے کیلئے پناہ گاہیں اور لنگر خانے قائم کئے گئے۔
عمران خان نے یہ تہیہ کرلیا کہ اب ملک میں دونہیں بلکہ ایک نظام چلے گا اور جس طرح بڑے بڑے لوگ بڑے بڑے ہسپتالوں میں اپنا علاج کرواتے ہیں اسی طرح غریب آدمی بھی شفا انٹرنیشنل، ڈاکٹر ہسپتال،ساحل ہسپتال اور نیشنل ہسپتال جیسے بڑے بڑے ہسپتالوں میں اپنا علاج کروائے گا۔ انہوں نے کہاکہ سب سے پہلے کے پی کے میں ہیلتھ کارڈ کا اجرا کیاگیا جہاں سب سے زیادہ آنکھوں کی بیماریوں کا علاج وآپریشن کئے گئے کیونکہ وہاں کے لوگوں میں شوگر کی مرض کی شرح زیادہ تھی اور غریب کو اچھا کھانا میسر نہ تھا اسی طرح دوسرے نمبر پر سب سے زیادہ ان بیٹیوں اور بہنوں کا علاج معالجہ کیاگیا جو ڈلیوری کے دوران وسائل نہ ہونے کی وجہ سے یا دائیوں سے علاج کے باعث زندگی کی بازی ہارجاتی تھیں مگر اب عمران خان نے ان کا ہاتھ پکڑا ہے جو ریاست مدینہ کی طرز کی جانب اہم قدم ہے۔

More

Related news

Leave a Reply

Close