قومی

تحریک لبیک مارچ، کھیتوں سے ملنے والی نعش کی شناخت ہوگئی،

گوجرانوالہ (94 نیوز) گوجرانوالہ میں کالعدم تحریک لبیک پاکستان کے مارچ کے دوران ڈیوٹی دینے والا کانسٹیبل بدترین تشدد سے جاں بحق ہوگیا۔ نعش کھیتوں سے وردی کے بغیر ملی، آج کانسٹیبل کی عدنان کے نام سے شناخت ہوگئی۔

 پولیس نے دعویٰ کیا ہے کہ کالعدم تنظیم کے کارکنان کے تشدد سے پولیس اہلکار کی شہادت ہوئی، کانسٹیبل عدنان احسان وزیر آباد میں تحریک لبیک کے دھرنے پر ڈیوٹی کے فرائض انجام دے رہا تھا۔ کالعدم تنظیم کے کارکنوں نے پولیس اہلکار کو اغواء کیا اور مبینہ تشدد کا نشانہ بناتے ہوئے شہید کر دیا، نعش بھروکی نزد ڈیرہ گجراں کھیتوں میں پھینک دی۔

تھانہ صدر وزیر آباد میں مقدمہ درج کر کے نعش پوسٹ مارٹم کے لئے ٹی ایچ کیو وزیر آباد منتقل کر دی گئی ہے۔ ایس ایس پی انویسٹی سید علی کو معاملہ کی تحقیقات کر کے رپورٹ پیش کرنے کے احکامات جاری کر دیئے گئے۔ رپورٹ کی روشنی میں مزید قانونی کارروائی عمل میں لائی جائے گی۔

کانسٹیبل عدنان کے بھائی کے مطابق ان کا 2 دن سے اپنے بھائی سے رابطہ نہیں ہو رہا تھا، ہم نے پولیس سے رابطہ کیا، جس کے بعد اس کی تلاش شروع کی گی، گزشتہ روز وزیر آباد کے کھیتوں سے اس کی نعش مل گئی۔

مزید

متعلقہ خبریں

جواب دیں

Close