بین الاقوامیسائنس و ٹیکنالوجی

کورونا کے مریضوں کی جان بچانے کیلئے دواؤں کے استعمال کی منظوری دیدی گئی

واشنگٹن (94 نیوز) امریکا میں خوراک و ادویات کی انتظامیہ (ایف ڈی اے) نے کورونا وائرس کے مخصوص مریضوں کی جان بچانے کیلئے خصوصی ادویات استعمال کرنے کی اجازت دے دی ہے۔

ایف ڈی اے کے مطابق ڈاکٹرز کو سلفیٹ، کلوروکوئن فاسفیٹ پراڈکٹس کلوروکوئن کے ہنگامی استعمال کی اجازت دی گئی ہے۔ دونوں ادویات ملیریا اور آرتھرائٹس سمیت بعض دیگر بیماریوں کیخلاف استعمال کی جاتی ہیں اور منہ کے ذریعے دی جانے والی ادویات ہیں۔

حکام کے مطابق کورونا وائرس کے خلاف دوائی نہ ہونےکا کسی حد تک متبادل تلاش کرلیا گیا ہے، کلینکل ٹرائل ممکن نہ ہونے کی صورت میں ڈاکٹر اگر مناسب سمجھیں تو ہسپتالوں میں زیر علاج بالغ اور بڑی عمر کے کورونا مریضوں کو کلوروکوئن فاسفیٹ اور ہائیڈروگزی کلوروکوئن سلفیٹ ادویات تجویز کرسکیں گے۔ 

اس سے پہلے کلوروکوئن فاسفیٹ اور ہائیڈروگزی کلوروکوئن سلفیٹ استعمال کرنے کے حوالےسے اہم معلومات ہیلتھ کیئر فراہم کرنے والوں اور مریضوں دونوں کو دینا لازم ہوگا، دونوں دوائیوں کے استعمال سے ممکنہ خطرات اور ڈرگز کا باہمی عمل بھی واضح کرنا ہوگا۔

اگرچہ کورونا کیخلاف باضابطہ طورپر منظور کردہ کوئی بھی دوائی دستیاب نہیں ہے تاہم امریکی وزیرصحت کا کہنا ہے کہ امریکی اور دنیا بھر کے سائنسدانوں نے کورونا سے نمٹنے کے لیے مختلف ادویات تجویز کی تھیں جن میں یہ دونوں دوائیں بھی شامل ہیں،  تجربات کےدوران یہ ادویات کورونا کیخلاف کچھ فعال نظرآئی تھیں۔

تاہم اس وائرس کیخلاف موثر ثابت ہونے کے لیے سائنسی شواہد صرف کلینکل ٹرائلز ہی سے حاصل کیے جاسکتے ہیں جس میں وقت لگے گا۔ اس صورت حال میں وزیرصحت اگر کسی دوائی کے ایمرجنسی استعمال کی اجازت دیدیں تو ایف ڈی اے کو یہ اختیار حاصل ہو جاتا ہے کہ وہ کسی غیر منظور شدہ طبی تدبیر کو تجویز کرسکیں یا کسی اور بیماری کے علاج کے لیے پہلے سے منظور شدہ تدبیر کاغیرمنظور شدہ استعمال ممکن بناسکیں تاکہ کیمیائی، حیاتیاتی  اور تابکاری یا نیوکلیئر خطرات سےنمٹا جاسکے۔ 

مزید

متعلقہ خبریں

جواب دیں

Close