قومی

کرپشن ثابت ہونے پرسابق ایکسیئن صنعت و حرفت بلوچستان کو 3 سال قید96لاکھ جرمانہ

کوئٹہ (94 نیوز) احتساب عدالت نے محکمہ صنعت و حرفت کے سرکاری ٹھیکوں میں کرپشن کا الزام ثابت ہونے پر سابق ایکسیئن صنعت و حرفت بلوچستان کو 3 سال قید بامشقت اور 96 لاکھ جرمانہ جبکہ ان کے فرنٹ مین کو ایک سال قید بامشقت کی سزا سنا دی۔

قومی احتساب بیورو(نیب) بلوچستان نے سابق ایکسیئن صنعت و حرفت عدیل انور و دیگر کے خلاف اختیارات کا ناجائز استعمال کرتے ہوئے کروڑوں روپے کی کرپشن کیس کی تحقیقات مکمل کر کے ریفرنس احتساب عدالت میں دائر کر دیا تھا۔

تحقیقات کے دوران سامنے آنے والے شواہد کے مطابق ملزم عدیل انور نے ایکسیئن صنعت و حرفت کی حیثیت سے متعدد سرکاری ٹھیکے اپنے منظورِ نظر ٹھیکیداروں کو غیر قانونی طور پر دیے جس کے عوض بھاری رقم رشوت کی مد میں اپنے فرنٹ مین خادم حسین کے اکاونٹ میں وصول کی۔

دونوں ملزمان کو کچھ عرصہ قبل گرفتار کر کے جیل بھجوا دیا گیا تھا۔ملزم کے خلاف ناقابل تردید ثبوت و شواہد کی روشنی میں احتساب عدالت کوئٹہ کے جج منور شاہوانی نے سابق ایکسین صنعت و حرفت بلوچستان عدیل انور کو 3 سال قید بامشقت اور 96 لاکھ جرمانہ جبکہ ملزم کے بے نامی دار خادم حسین کو ایک سال قید بامشقت کی سزا سنا دی۔

مزید

متعلقہ خبریں

جواب دیں

Close