قومی

ڈاکٹر قدیر کیساتھ ہیرو جیسا سلوک نہیں کیا گیا، انکی وفات ملک کیلئے افسوسناک لمحہ ہے،

اسلام آباد (94 نیوز) سابق چئیرمین سینیٹ میاں رضا ربانی نے کہا کہ ڈاکٹر عبدالقدیر کا انتقال ملک کے لیے افسوسناک لمحہ ہے۔ شہید ذوالفقار علی بھٹو پاکستان کے ایٹمی پروگرام کے تصوارتی باپ تھے جب کہ ڈاکٹر قدیر نے عملی لحاظ سے اس پروگرام کو ترتیب دیا۔وہ ایک قومی ہیرو ہیں،انہوں نے مزید کہا کہ ڈاکٹر قدیر کے ساتھ ہیرو جیسا سلوک نہیں کیا گیا۔

واضح رہے کہ محسنِ پاکستان، ایٹمی سائنسدان ڈاکٹر عبد القدیر خان گزشتہ روز صبح 85 برس کی عمر میں رضائے الٰہی سے انتقال کر گئے تھے ۔ ڈاکٹر عبدالقدیر خان کچھ عرصہ پہلے کورونا میں مبتلا ہوئے تھے، ڈاکٹر عبدالقدیر خان کو پھیپھڑوں میں تکلیف کے باعث ہسپتال منتقل کیا گیا تھا تاہم وہ جانبر نہ ہو سکے اور خالق حقیقی سے جا ملے۔


ڈاکٹر عبدالقدیر خان کو صبح 6 بجے کے قریب کے آر ایل ہسپتال لایا گیا تھا جہاں ان کی طبیعت بہت زیادہ خراب ہو گئی تھی، ڈاکٹروں نے ایٹمی سائنسدان کو بچانے کی پوری کوشش کی تاہم صبح 7 بج کر 4 منٹ پر وہ دار فانی سے کوچ کر گئے۔ پاکستان کے دفاع کو ناقابلِ تسخیر بنانے میں کلیدی کردار ادا کرنے والے جوہری سائنسدان کی نماز جنازہ فیصل مسجد اسلام آباد میں سہہ پہر 3 بج کر 30 منٹ پر ادا کی گئی جس کے بعد انہیں پورے سرکاری اعزاز کے ساتھ ایچ 8 کے قبرستان میں سپرد خاک کردیا گیا ۔

مزید

متعلقہ خبریں

جواب دیں

Close