National

پی آئی سی حملہ، عمران خان کے بھانجے کو ریلیف دیدیا گیا

Lahore (94 news) وزیراعظم عمران خان کے بھانجے حسان نیازی کو پی آئی سی پر حملے کے واقعے میں بڑا ریلیف دے دیا گیا۔ گذشتہ روز پنجاب انسٹی ٹیوٹ آف کارڈیالوجی میں پیش آنے والے واقعہ میں عمران خان کے بھانجے حسان نیازی بھی پیش پیش تھے۔ تاہم ویڈیو سامنے آنے کے بعد حسان نیازی نے واقعے سے لاتعلقی کا اظہار کر دیا۔ البتہ یہاں پر یہ بات قابل ذکر ہے کہ نئے پاکستان میں بھی قانون نہ بدلے۔ پی آئی سی پر حملے کے واقعے میں توڑ پھوڑ میں ملوث وزیراعظم کا بھانجا ایف آئی آر سے بچ گیا۔ کل کے واقعے کے بعد وکلاء پر درج کیے گئے مقدمے میں حسان نیازی کو شامل ہی نہیں کیا گیا۔حسان نیازی ہسپتال میں توڑ پھوڑ اور پولیس موبائل کو آگ لگاتے نظر آئے۔حملے کے دوران بیرسٹر حسان نیازی وکلاء کو اشتعال بھی دلاتے نظر آئے۔

ذرائع کے مطابق اس واقعے کے درج مقدمے میں بااثر افراد کو شامل نہیں کیا جا رہا۔ یاد رہے پی آئی سی ہسپتال پر حملہ کرنے اور متعدد مریضوں کے جاں بحق ہونے کے باوجود وزیراعظم کے بھانجے نے وکلاء کی حمایت کی تھی ، حسان نیازی کا کہنا تھا کہ جو ہوا اس کیلئے وکلاء کو ذمے دار نہیں ٹھہرایا جا سکتا، وزیراعلی عثمان بزدار اس واقعے میں ملوث ہیں، ڈاکٹرز نے اشتعال انگیزی کی جبکہ پولیس خاموش تماشائی بنی رہی۔سب سے بڑے امراض قلب کے ہسپتال پی آئی سی لاہور پر وکلاء کی جانب سے حملہ کیے جانے کے واقعے پر وزیراعظم عمران خان نے بھانجے اور نوجوان وکیل حسان نیازی نے ردعمل دیا ہے۔ حسان نیازی نے تمام واقعے پر ردعمل دیتے ہوئے متاثرین کی داد رسی کرنے کی بجائے وکلاء کی ہی حمایت کی ہے۔ حسان نیازی نے تمام معاملے کا الزام اور ملبہ وزیراعلی پنجاب عثمان بزدار، ڈاکٹرز اور پولیس پر ڈال دیا۔

More

Related news

Leave a Reply

Close