قومی

پنجاب حکومت کی بھی عوام پر ایک اور پٹرول بم گرانے کی تیاری

لاہور(94 نیوز) پنجاب حکومت نے محکمہ ایکسائز کو ڈیزل اور پٹرول پر ایک روپیہ فی لیٹر کی شرح سے ’’کاربن اخراج ٹیکس‘‘ عائد کرنے کی اصولی منظوری دے دی ہے۔ وزیر اعظم عمران خان نے گاڑیوں سے پیدا ہونے والی ماحولیاتی آلودگی کے خاتمہ کیلیے محکمہ ایکسائز کے ذریعے ڈیزل اور پٹرول پر ایک روپیہ فی لیٹر کی شرح سے کاربن اخراج ٹیکس عائد کرنے کی اصولی منظوری دے دی ہے۔

پنجاب حکومت نے آئندہ مالی سال کے بجٹ میں 30سے 35 ارب روپے کے نئے ٹیکسز لگانے کی تجاویز تیار کر لی ہیں ، پنجاب کو تین حصوں جنوبی ، شمالی اور وسطی پنجاب کی تقسیم کے تحت فنڈز دئیے جائیں گے ،وزیر اعظم عمران خان نے پنجاب کےبجٹ کے حوالے سے اہم اجلاس 10جون کو طلب کر لیا ۔

محکمہ خزانہ پنجاب کے ذرائع کے مطابق آئندہ بجٹ میں زرعی آمدنی کی شرح بڑھانے کی تجویز زیر غور ہے، صوبے میں فیول کے ا ستعمال پر ایک فیصد نیا کاربن ٹیکس لگانے پر غور کیا جا رہا ہے اور ذرائع کے مطابق اس تجویز کی منظوری بھی دے دی گئی ہے۔

اس کے علاوہ پروفیشنل ٹیکس کادائرہ کاربڑھانے کی تجویز بھی زیرغور ہے تاہم وکلا ء پروفیشنل ٹیکس لگانے کی تجویز موخر کر دی گئی ۔ اس کے علاوہ پنجاب کےبجٹ برائے مالی سال 2019،20 کیلئے صوبے کو 3 حصوں میں تقسیم کرنے کا فیصلہ بھی کر لیا گیا ہے۔ جس میں جنوبی پنجاب کیلئے 35فیصد، شمالی پنجاب کیلئے 33فیصد جبکہ وسطیپنجاب کیلئے 32فیصد مختص کرنے کی تجویز ہے ۔

مزید

متعلقہ خبریں

جواب دیں

Close