National

Caretaker Chief Minister Jardanwala to the victims 20 Approval to give Rs.1 lakh per household

محسن نقوی کابینہ سمیت مسیحی برادری سے ہمدردی کرنے جڑانوالہ پہنچ گئے

Faisalabad (94 news) پنجاب حکومت کا مسیحی برادری سے بھرپور اظہار یکجہتی کیلئے نگران وزیر اعلیٰ پنجاب محسن نقوی تمام صوبائی وزراء کے ہمراہ آج جڑانوالہ کے علاقے عیسی نگر پہنچ گئے۔

نگران وزیراعلیٰ محسن نقوی اور صوبائی وزراء ایک ہی کوچ میں بیٹھ کر اے ای سی چرچ پہنچے اور مسیحی برادری کی دعائیہ تقریب میں شرکت کی۔ پنجاب کی تاریخ میں پہلی بارنگران وزیراعلیٰ محسن نقوی کی زیر صدارت مسیحی برادری سے اظہار یکجہتی کیلئے چرچ کے اندر ہی صوبائی کابینہ کا اجلاس منعقد ہوا۔ چرچ میں تمام صوبائی وزراء،مشیران،چیف سیکرٹری،انسپکٹر جنرل پولیس،ایڈیشنل چیف سیکرٹری داخلہ،متعلقہ سیکرٹریز اوراعلی حکام موجود تھے۔چیف سیکرٹری نے صوبائی کابینہ کا یک نکاتی ایجنڈا پیش کیا۔صوبائی کابینہ نے متفقہ طورپر جڑانوالہ واقعہ میں نذرآتش کیے جانے والے گھروں کے مالکان کیلئے20لاکھ روپے فی گھر مالی امداد کی منظوری دی۔محسن نقوی نے کہا کہ واقعہ میں نذرآتش ہونے والے ہرگھر کے مالک کو20لاکھ روپے کی امدادی رقم کے چیک48گھنٹے تک متاثرین کو دے دیئے جائیں گے۔وزیراعلیٰ نے بتایا کہ جڑانوالہ کے دو گرجا گھروں کی تعمیر وبحالی مکمل کرلی گئی ہے جبکہ دیگر گرجاگھروں کی مسیحی برادری کی مرضی کے مطابق جلد تعمیر وبحالی کی جائے گی۔وزیراعلیٰ نے کہا کہ یہاں آنے کا مقصد آپ کے دکھ میں برابرمیں شریک ہونا ہے۔ متاثرہ لوگوں کو انصاف دلانے کا وعدہ پورا کریں گے۔چرچ میں پاکستان کی سا لمیت، استحکام، ترقی اور عوام کی خوشحالی اور ملک و قوم کے اتحاد و یکجہتی کیلئے خصوصی دعا کی گئی۔محسن نقوی نے کہاکہ پاکستان ہرپاکستانی کا ہے،مسلم،مسیحی،سکھ،ہندو سب ایک ہیں۔ہر مظلوم کے ساتھ ہیں، ظالم کو کیفر کردارتک پہنچائیں گے۔وزیراعلیٰ کی ہدایت کے مطابق ایسو سی ایشن ایونجلیکل چرچز(اے ای سی) گرجا گھرسمیت ایک اورچرچ کی تعمیر و مرمت مکمل کرلی گئی ہے اورتزئین و آرائش کے بعد دونوں چرچوں کوعبادت کیلئے کھول دیا گیاہے۔ صوبائی وز راء،سینٹر کامران مائیکل، خلیل ظاہر سندھو، بشپ آزاد مارشل، چرچ کے پادری سیلم عارف، مسیحی برادری کی سرکردہ شخصیات، کمشنر فیصل آباد،آر پی او، سی پی او ڈپٹی کمشنر بھی اس موقع پر موجود تھے۔وزیراعلیٰ محسن نقوی نے جڑانوالہ چرچ میں مسیحی برادری سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ہمارا وعدہ ہے انصاف ضرور ملے گا،پوری ٹیم انصاف دلوانے کیلئے کام کررہی ہے۔دوچرچ سوفیصد بحال کردیئے گئے ہیں۔انہوں نے کہا کہ سیکرٹری سی اینڈ ڈبلیو نے کل کام شروع کیا تھا اورآج یہ کام مکمل ہوگیا ہے۔بے شک مجھے دس دفعہ آنا پڑے جتنے چرچ ہیں سارے کے سارے چرچ بحال کیے جائیں گے۔ ہمارا آپ کے ساتھ انصاف کا وعدہ ہے۔انہوں نے کہا کہ دین اسلام بھی ہمیں رواداری سکھاتا ہے۔ آج تمام اخبارات میں نبی کریمؐ کی طرف سے مسیحی برادری کولکھاگیا خط شائع کیاگیا ہے۔نبی کریمؐ کامسیحی برادری کو لکھا گیا خط ہمارے لئے مشعل راہ ہے۔نبی کریم ؐ کے مسیحی برادری کو لکھے گئے خط کی روشنی میں ہم نے مسیحی برادری کا تا قیامت خیال رکھنا ہے۔ جو نبی کریمؐ کا حکم ہے وہی ہمارے لئے سب سے بڑا حکم ہے۔ ہم نے چرچ کے اندر ہی کابینہ کا اجلاس منعقد کیا ہے۔ وزیر اعلیٰ محسن نقوی نے صوبائی وزراء کے ہمراہ دانش سکول جڑانوالہ میں متاثرہ مسیحی خاندانوں کیلئے قائم ریلیف کیمپ کا دورہ کیا۔وزیر اعلیٰ محسن نقوی نے متاثرہ مسیحی خاندانوں سے ملاقات کی اورانہیں دلاسہ دیا اور انصاف فراہم کرنے کی یقین دہانی کرائی۔وزیر اعلیٰ محسن نقوی نے مسیحی خاندانوں سے گفتگو کی اور ان کے مسائل سنے۔محسن نقوی نے کہاکہ متاثرین کے نقصانات کا جلد ازالہ کیا جائے گا۔ وزیر اعلی محسن نقوی نے متاثرہ خاندانوں کی جلد رجسٹریشن کی ہدایت کرتے ہوئے کہا کہ چرچوں کی بحالی کا کام شروع کردیا گیا ہے۔ چرچوں کو جلد اصل حالت میں بحال کریں گے۔محسن نقوی نے کہاکہ تاریخ میں پہلی بار پنجاب کابینہ کا اجلاس چرچ میں ہوا، متاثرہ خاندانوں کے لیے 20لاکھ روپے فی کس مالی امداد کی منظوری دی گئی ہے۔ وزیر اعلیٰ محسن نقوی نے متاثرہ خاندانوں کے بچوں کے ساتھ شفقت کا اظہار کیا۔انہوں نے کہا کہ پنجاب حکومت متاثرہ خاندانوں کے ساتھ ہے اور ساتھ کھڑی رہے گی۔ وزیر اعلی محسن نقوی نے مسیحی خاندانوں میں ضروری اشیاء تقسیم کیں۔بعدازاں وزیر اعلی پنجاب محسن نقوی صوبائی وزراء کے ہمراہ جڑانوالہ میں جامع مسجد صابری پہنچے اور امن کمیٹی کے ممبران، تمام مکاتب فکر کے علماء کرام اور دیگر مذاہب سے تعلق رکھنے والی شخصیات سے ملاقات کی۔وزیر اعلی محسن نقوی نے جڑانوالہ واقعہ کے بعد قیام امن کیلئے امن کمیٹی کے ممبران کی کاوشوں کو سراہا۔محسن نقوی نے کہاکہ سانحہ جڑانوالہ کے ذمہ داروں کو قانون کے تحت سخت سزا ملے گی۔ اس واقعہ سے قائد اعظم کے پر امن پاکستان کا امیج خراب ہوا، دین اسلام نے اقلیتوں کے ساتھ حسن سلوک کا درس دیا ہے، ہم سب نے مل کر مسیحی برادری کے دکھوں کا مداوا کرنا ہے۔

Show More

Related Articles

Leave a Reply

Back to top button