National

Another attempt to abduct women, including children, on the motorway

Islam Abad (94 news) Woman on the motorway again 3 بچوں سمیت اغواء کرنے کی کوشش کی گئی ہے۔بتایا گیا ہے کہ خواتین ٹیکسی سے شور کر رہی تھیں۔موٹروے پولیس نے خواتین کا شور سن کر پیچھا کیا۔ 3 بچوں کی مدد کی پکار سن کر موٹروے پولیس نے ٹیکسی کو روک لیا۔ اوراغواکاروں کو حراست میں لے لیا۔
ملزمان کو اسلحہ سمیت مقامی پولیس کے حوالے کر دیا گیا ہے۔

گذشتہ کچھ عرصہ میں موٹروے پر ڈکیتیوں اور اغوا کے کیسز رپورٹ ہو رہے ہیں۔موٹروے کے قریبی علاقوں می رہائش پذیر لوگوں کا کہنا ہے کہ اگرچہ یہ واقعات پہلے بھی پیش آتے تھے تاہم میڈیا پر اس طرح سے رپورٹ نہیں کیے جاتے، لیکن 9 ستمبر کو موٹروے پر پیش آنے والے ہولناک واقعے نے سب کے رونگٹے کھڑے کر دئیے تھے جہاں خاتون کو گاڑی سے اغوا کیا گیا بعدازاں بچوں کے سامنے زیادتی کا نشانہ بنایا گیا۔

موٹروے زیادتی کیس کو کئی روز گزر گئے لیکن پنجاب پولیس ابھی تک مرکزی ملزم کو گرفتار نہیں کر سکی۔اگرچہ اب ملزم کی شناخت بھی ہو چکی ہے،اس کی تصاویر بھی سوشل میڈیا پر وائرل ہیں۔جب کہ ملزم عابد علی کا ڈی این اے بھی خاتون سے میچ کر چکا ہے۔ملزم پورے علاقے میں ملزم کی فیملی مجرمانہ سرگرمیوں کی وجہ سے مشہور ہے۔ فورٹ عباس میں قبضہ، ڈکیتی اور چوری کی درجنوں واردتیں ملزم عابد علی کر چکا ہے۔
ملزم کو متعدد بار گرفتار کیا گیا لیکن مدعی پارٹی پر دباؤ ڈال کر صلح کر لی جاتی تھی۔ اور ملزم عدالت سے باعزت بری ہو جاتا تھا جبکہ رہا ہونے کے بعد اپنا علاقہ تبدیل کرتا اور نیا گینگ بنا کر دوبارہ کریمینل سرگرمیاں شروع کر دیتا تھا۔ بتایا گیا ہے کہ مرکزی ملزم عابد کیخلاف پہلا مقدمہ2013ء میں ڈکیتی اور زنا بالاجبر کی دفعات کے تحت تھانہ فورٹ عباس میں درج ہوا۔
ملزم کیخلاف قتل، ڈکیتی اور زنا زیادتی کے سات مقدمات تھانہ کھچی والا میں درج ہوئے۔ جن میں ملزم عابد کیخلاف دوسرا مقدمہ 2014 میں سگے ماموں کو قتل کرنے کے جرم میں، تیسرا مقدمہ 2014 میں ڈکیتی، چوتھا مقدمہ 2014 میں ڈکیتی پر تھانہ کھچی والا میں درج کیا گیا۔ اسی طرح مرکزی ملزم عابد کیخلاف تھانہ کچھی والا میں پانچواں مقدمہ 2014 میں ڈکیتی، ڈکیتی کا چھٹا مقدمہ 2016 میں، زنا کا ساتواں مقدمہ 2017 میں اور آٹھواں مقدمہ 2017 میں ڈکیتی پر تھانہ کچھی والا میں درج کیا گیا۔

More

Related news

Leave a Reply

Close