National

Exposing the corruption of billions of rupees by illegally selling the land of the Inhar Department became a punishment for the citizens

محکمہ انہار کی اربوں روپے کی کرپشن بے نقاب کرنے والے شہری اکبر علی نے پریس کانفرنس میں حکومت پنجاب اور پولیس سے جانی و مالی تحفظ کا مطالبہ کر دیا
جانی نقصان پہنچا تو اس کی ذمہ داری ایس ڈی او انہار پر ہو گی۔ پریس کانفرن
Q

Faisalabad (94 news) محکمہ انہار کی زمین غیر قانونی طور پر فروخت کر کے اربوں روپے کی کرپشن کو بے نقاب کرنا شہری کیلیے عذاب بن گیا۔ اکبر علی نے پریس چیمبرز میں ہنگامی پریس کانفرنس کرتے ہوئے وزیر اعلیٰ پنجاب محترمہ مریم نواز، آئی جی پولیس پنجاب، آر پی او، سی پی او فیصل آباد سے جانی و مالی تحفظ کا مطالبہ کر دیا۔

تفصیلات کے مطابق شہری اکبر علی نے پریس کانفرنس میں بتایا کہ محکمہ انہار میں اربوں روپے کی مسلسل چوری ہو رہی تھی گزشتہ بارہ سال سے محکمہ انہار فیصل آباد کے ایک ہی ڈویژن میں تعینات ایس ڈی او ناصر محمود واہلہ نے مدوآنہ، سارنگ والہ، پہاڑنگ اور زیرِ انتظام علاقوں میں سرکاری رقبہ پر ناجائز قبضے کروا کر قیمتی سرکاری جائیداد بیچ ڈالی۔ جس کی نشاندہی اور متعلقہ فورمز پر قانونی کارروائی کے لیے رجوع کیا گیا تو اس انکوائری سے باز رکھنے کیلیے مختلف طریقوں سے دھمکیاں اور دباو ڈالا جا رہا ہے۔ اعلیٰ افسران بھی مذکورہ SDO کی کرپشن کے خلاف تادیبی کاروائی کرنے کی بجائے لیت و لعل سے کام لے رہے ہیں۔ مدوآنہ ڈرین پر ناجائز بجلی کے کھمبے، ناجائز پُلوں کی تعمیر، سیم نالے کے ساتھ ساتھ رقبہ جات پر غیر قانونی اور ناجائز تعمیرات کروا کر لاکھوں روپے بھتہ وصول کیا جاتا ہے۔ متعلقہ سب انجینئرز وقاص اور زاہد مکمل طور پر اپنے SDO کے مددگار اور لوٹ مار میں برابر کے شریک و حصہ دار ہیں۔ جس سب انجینئر وقاص کی انکوائری جاری ہے اسی کو مورخہ 05-06-2024 کو ہونے والی جوائنٹ انسپیکشن میں شامل کیا گیا تاکہ اپنی کرپشن کو چھپا سکے۔
میاں اکبر علی کا مزید کہنا ہے کہ مختلف طریقوں سے مجھے بدنام کرنے اور دھمکیوں کی وجہ سے پریس کانفرنس پر مجبور کیا گیا ہے۔ مجھ پر مختلف انداز سے دھمکیاں اور دباٶ ڈالا جا رہا ہے کہ دائر کردہ درخواست واپس لو۔ مگر میرا عزم ہے کہ ملکی خزانے کو اربوں روپے کا نقصان پہنچانے والوں کو کیفر کردار تک پہنچا کر دم لوں گا۔ وزیر اعلیٰ مریم نواز، حکام بالا اس پر ایکشن لیں اور آئی جی پولیس پنجاب، آر پی او، سی پی او فیصل آباد مجھے جانی تحفظ فراہم کریں۔ اگر مجھے جانی یا مالی نقصان پہنچا تو اس کی ذمہ داری ایس ڈی او ناصر واہلہ اور اس کے ساتھیوں پر ہو گی۔

Show More

Related Articles

Leave a Reply

Back to top button