National

Was going to look great on women traveling on a motorcycle in Lahore

Lahore(94 news) The city would require helmets for motorcycle suardunun men and women today would not exempt anyone, heavy goods road bike lady wardens have also been deployed.

Captain Chief Traffic Officer Lahore(T)لیاقت علی ملک نے کہا ہے کہ موٹرسائیکل سوار فرنٹ اور سیکنڈ سیٹر کےلئے ہیلمٹ لازمی ہے، موٹر وہیکل آرڈیننس 1965ءکے تحت کوئی بھی فرد بغیر ہیلمٹ نہ موٹرسائیکل چلا سکتا ہے اور نہ ہی بغیر ہیلمٹ پیچھے بیٹھ سکتا ہے۔ عدالتی احکامات کی من و عن پاسداری کو یقینی بنانے کےلئے آج سے پیچھے بیٹھنے والے کےخلاف بھی سخت کریک ڈاؤن کیا جائیگا اور کوئی خاتون بغیر ہیلمٹ اس پابندی سے مستثنیٰ نہیں ہوگی، موٹرسائیکل چلانی یا پیچھے بیٹھنا ہے تو ہیلمٹ پہننا لازمی ہے۔

To crackdown on heavy road bike lady wardens would also have been deployed, sitting behind that helmet tickets challan without tickets will be issued challan front Ryder. Lane line, stop line and side court tickets will be issued to those who do not view mrrz.

Tags
More

Related news

Leave a Reply

Close