قومی

عدلیہ کو تیسرا کرپٹ ادارہ قرار دینے کا معاملہ، پشاور ہائیکورٹ نے محفوظ فیصلہ سنا دیا

پشاور (94 نیوز) ٹرانسپرنسی انٹرنیشنل رپورٹ میں عدلیہ کو تیسرا کرپٹ ادارہ قرار دینے کے معاملے  پر چیف جسٹس پشاور ہائیکورٹ نے 19فروری کو محفوظ کئے جانے والا فیصلہ سنا دیا۔

تفصیلات کے مطابق فیصلے میں کہا گیا ہے کہ عدالت نے ٹرانسپرنسی انٹرنیشنل کو 2023 کی سالانہ رپورٹ دوبارہ شائع کرنے کا حکم دیدیا ہے۔ عدالت نے غیرموجود ڈیٹا شامل کرکے حقائق پر مبنی رپورٹ شائع کرنے کا بھی حکم دیدیا ہے۔ اور رپورٹ 24 اپریل تک رجسٹرار پشاور ہائیکورٹ کے پاس جمع کرانے کی بھی ہدایت کردی۔

فیصلے میں مزید کہا گیاہے کہ سروے میں مسترد فارم کی مجموعی تعداد کو رپورٹ میں شائع کیا جائے،رپورٹ میں تمام عوامی رائے کے تناسب کو واضح طور پر شائع کرے،پڑھنے والے کیلئے کوئی ابہام نہ چھوڑا جائے،عدالتی فیصلے میں کہا گیا ہے کہ ٹرانسپرنسی انٹرنیشنل کو رپورٹ درست کرنے کا اقدام خود کرنا چاہئے تھا،فیصلے سے ایسا  تاثر نہ لیا جائے کہ آزادی رائے کے اظہار پر پابندی لگائی گئی ہے،عدالت موثر، تحقیقاتی، درست ریسرچ کی حوصلہ افزائی کرتی ہے۔

Show More

Related Articles

جواب دیں

Back to top button