National

عثمان بزدار کو عہدے سے ہٹانے کا فیصلہ کر لیا گیا

Lahore(94 news) وزیراعظم عمران خان نے وزیر اعلیٰ پنجاب عثمان بزدار کو عہدے سے ہٹانے کا فیصلہ کر لیا ہے۔ ذرائع کے مطابق وزیر اعظم عمران خان نے فیصلہ کر لیا ہے کہ عثمان بزدار کوپنجاب کے وزارتِ اعلیٰ کے منصب سے ہٹا دیا جائے۔ اس سے پہلے فیاض الحسن چوہان کو پنجاب کی وزارتِ اطلاعات سے ہٹا دیا گیا ہے ذرائع کا کہنا ہے کہ عمران خان نے پنجاب میں کسی ایسے شخص کو لانے کا فیصلہ کیا ہے جو میرٹ پر پورا اترتا ہو اور دباوٴ برداشت کر سکے۔

عمران خان پر گزشتہ 4ماہ سے پنجاب کا وزیراعلیٰ تبدیل کرنے کے لیے دباوٴ ڈالا جا رہا ہے، حالیہ پاک بھارت کشیدگی کی وجہ سے یہ معاملہ دب گیا تھا لیکن کشیدگی ختم ہوتے ہی دوبارہ اس حوالے سے وفاق اور پنجاب میں بحث چھڑی ہوئی ہے اور باوثوق ذرائع سےخبرآئی ہے کہ عثمان بزدار کو ہٹایا جارہا ہے۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ پنجاب گورنر ہاوٴس میں اس وقت عثمان بزدار کے خلاف سازشیں کی جا رہی ہیں اور عثمان بزدار بھی ان سازشوں پر نظر رکھے ہوئے ہیں لیکن اب عمران خان نے دباوٴ کے سامنے گھٹنے ٹیک دیے ہیں جبکہ دوسری طرف ق لیگ مکمل طور پر عثمان بزدار کے ساتھ کھڑی ہے۔

عثمان بزدار نے بھی خود کو ق لیگ کے پلڑے میں ڈال دیا ہے جس کے بعد ق لیگ ان کے ساتھ مزید مضبوط حمایت کے ساتھ کھڑی ہے۔

یاد رہے کہ وفاق اور پنجاب میں تحریک انصاف کی حکومت ق لیگ کی مرہون منت ہے اس لیے ق لیگ کی حمایت کی بھی عمران خان کو سخت ضرورت ہے یہاں کچھ ذرائع کا یہ بھی کہنا ہے کہ ق لیگ جس ضمانت پر تحریک انصاف کے ساتھ آئی تھی اس ضمانت کی وجہ سے تحریک انصاف کو بہت زیادہ تشویش نہیں ہے۔ منگل کے روز ق لیگی راہنما چوہدی شجاعت حسین اور طارق بشیر چیمہ نے عمران خان سے ملاقات بھی کی ہے امکان ہے کہ اس ملاقات میں بھی پنجاب کی وزارتِ اعظمیٰ کے حوالے سے بات چیت کی گئی ہے۔ لیکن باخبر ذرائع کا یہی کہنا ہے کہ عثمان بزدار کے وزیرِاعلیٰ ہاوٴس میں قیام کے دن اب کم رہ گئے ہیں۔

More

Related news

Leave a Reply

Close