سائنس و ٹیکنالوجیقومی

سوشل میڈیا کے استعمال بارے نئے قوانین کے نفاذ کی تیاری

اسلام آباد (94 نیوز) وفاقی کابینہ نے سوشل میڈیا کے حوالے سے نئے قوانین کے نفاذ کی تیاری کرلی ہے، وزیراعظم اور کابینہ کی طرف سے سوشل میڈیا کے نئے رولز کی منظوری دے دی گئی ، وزارت آئی ٹی ائندہ چند روز میں اطلاق کا باقاعدہ نوٹیفکیشن بھی جاری کردے گی۔

تفصیلات کے مطابق وفاقی وزیر انفارمیشن ٹیکنالوجی امین الحق نے تصدیق کرتے ہوئے بتایا کہ کابینہ کی طرف سے نئے سوشل میڈیا قوانین کی منظوری دیدی گئی، اس بارے میں وزارت آئی ٹی کی کمیٹی کی طرف سے تمام رولز کا جائزہ لے کر سمری کابینہ کو بھیجی گئی تھی ۔
بتایا گیا ہے کہ نئے قوانین کے تحت سوشل میڈیا کمپنیاں یا سروس فراہم کرنے والے ادارے معاشرتی سفارشات تشکیل دیں گے ، جن میں سوشل میڈیا استعمال کرنے والوں کومواد کی اپ لوڈنگ سے متعلق آگاہی دی جائے گی ، جب کہ کسی دوسرے شخص سے متعلق منفی رجحان کاکوئی مواد اپ لوڈ نہیں ہوگا ، دوسروں کی نجی زندگیوں کو متاثر کرنے والے مواد ، مذہب اور پاکستان کے ثقافتی اور اخلاقی اقدار کے مخالف مواد ، سوشل میڈیا پر بچوں کو متاثر کرنے والے ہر قسم کے مواد اور کسی شخص کی شخصیت کی نقل بنانے والے مواد پر پابندی ہوگی ، اس کے علاوہ دفاعی اداروں اور دفاع پاکستان مخالف مواد اور سوشل میڈیا پر تشدد، نفرت انگیز مواد پر پابندی ہوگی ۔
مزید یہ کہ نئے قوانین کے تحت یوٹیوب، فیس بک، ٹک ٹاک، ٹوئیٹر، گوگل پلس سمیت کمپنیاں قوانین کی پابند ہوں گی ، جب کہ 5 لاکھ سے زائد صارفین والی سوشل میڈیا کمپنیوں کی پی ٹی اے میں رجسٹریشن لازمی قرار دی گئی ہے ، نئے قوانین کے نفاذ کے بعد سوشل میڈیا کمپنیاں 9 ماہ میں دفاتر قائم کرنے کی پابند ہوں گی، جب کہ کمپنیاں 3 ماہ میں کوآرڈی نیشن کی خاطر فوکل پرسن مقرر کریں گی اور 18 ماہ میں ڈیٹا بیس سرور قائم کیا جائے گا ، سوشل میڈیا کمپنیاں فورمز پر گریوینس آفیسر مقرر کرکے رابطہ معلومات دیں گی اور سوشل میڈیا فورمز ، سروس پروائیڈرز ، لائیواسٹریمنگ، آن لائن میکنزم تشکیل دیں گی جب کہ انتہا پسندی، دہشتگرد، نفرت انگیزمواد، فحش، تشدد کی لائیو اسٹریمنگ پر بھی پابندی ہوگی۔

مزید

متعلقہ خبریں

جواب دیں

Close