قومی

اسلام آباد میں لگنے والے بینرزپاکستان کیخلاف نہیں تھے۔ حکومت کا اعتراف

اسلام آباد (94 نیوز) وفاقی وزیر داخلہ اعجاز شاہ نے کہاکہ اب طاقت سے کسی کو دبایا نہیں جا سکتا، کشمیریوں کی جدو جہد ایک تحریک بن چکی ہے، اسلام آباد میں جو بینر لگائے گئے اس پر انتظامیہ حرکت میں آ ئی۔ انہوں نے کہاکہ جو بینرز لگائے گئے وہ پاکستان کے خلاف نہیں بلکہ انڈیا کے خلاف تھے۔انہوں نے کہاکہ بینرز پر لکھا تھا کہ اکھنڈ بھارت دہشت گرد ہے اور بھارتی وزیر اعظم اکھنڈ بھارت کا خواب پورا کرینگے، بینرز مسلم لیگ نواز گوجرانوالہ کے صدر نے لگوائے تھے۔انہوں نے کہاکہ بینرز لگوانے والے اور لگانے والے پکڑے گئے۔

تفصیلات کے مطابق سینٹ کی قائمہ کمیٹی برائے داخلہ کے چیئر مین رحمن ملک نے کہا ہے کہ بھارتی وزیر اعظم نریندر مودی وار کریمنل ہے، دنیا اور پوری پاکستانی قوم کشمیریوں کا ساتھ دے ۔جمعرات کو سینیٹر رحمان ملک کی زیر صدارت سینٹ کی قائمہ کمیٹی داخلہ کا اجلاس ہوا ۔ رحمن ملک نے کہاکہ پاکستان مشکل حالات سے گزر رہا ہے۔انہوں نے کہاکہ بھارت نے کشمیریوں کے ساتھ بر بریت کا مظاہرہ کیا۔انہوں نے کہاکہ بھارت کشمیر میں مسلمانوں کی نسل کشی کی طرف جا رہا ہے۔ بھارت کے خلاف حکومت پاکستان کے اقدامات کی تائید کرتے ہیں۔  اب ہمیں بھارتی وزیر اعظم مودی کو ٹارگٹ کرنا ہو گا۔ نریندر مودی کو امریکہ نے دہشت گرد قرار دیا تھا۔ فنانشل ایکشن ٹاسک فورس نے پاکستان کے ساتھ نا انصافی کی ہے۔

وفاقی وزیر داخلہ اعجاز شاہ نے کہاکہ اب طاقت سے کسی کو دبایا نہیں جا سکتا،کشمیریوں کی جدو جہد ایک اندورونی تحریک بن چکی ہے۔ انڈیا نے کشمیر میں جو کیا ہے اب ہمیں چوکنا ہو کر رہنا ہونا گا۔ جو بھی کام ہو وہ قانون کے مطابق ہونا چاہیے۔ موٹر سائیکل پر چھ سواریوں کی اجازت دے دی،ہم نے مصلحت کے تحت ہر کام کو مذاق بنا دیا ہے۔ اسلام آباد میں جو بینر لگائے گئے اس پر انتظامیہ حرکت میں آ ئی۔جو بینرز لگائے گئے وہ پاکستان کے خلاف نہیں بلکہ انڈیا کے خلاف تھے۔ انہوں نے کہاکہ بینرز لگوانے والے اور لگانے والے پکڑے گئے،ریاست مخالف سر گرمیاں کرنے والوں کے خلاف کارروائی کی جاتی ہے۔کمیٹی میں ایف سی اہلکاروں کو تین ماہ سے تنخواہوں کی عدم ادائیگی کا معاملہ زیر بحث آیا ۔کمیٹی نے ایف سی اہلکاروں کو تنخواہیں ادا نہ کرنے پر اظہار برہمی کیا ۔ کمانڈنٹ ایف سی معظم جاہ انصاری نے بریفنگ دی کہ 1597 اہلکاروں کو تین ماہ سے تنخواہ نہیں ملی۔انہوںنے کہاکہ فنڈز کی کمی کے باعث تنخواہوں کی ادائیگی نہیں کر سکے۔انہوںنے کہاکہ تنخواہوں کی ادائیگی کے لئے 1000ملین روپے درکار ہیں۔کمیٹی نے ہدایت کی کہ وزارت داخلہ فوری طور پر ایف سی اہلکاروں کی تنخواہوں کی ادائیگی کے لئے فنڈز مہیا کرے۔

مزید

متعلقہ خبریں

جواب دیں

Close